hafizulhadith - حافظ الحدیث
شیخ الاسلام حافظ القرآن و الحدیث مولانا محمد عبداللہ درخواستی کی پون صدی پر محیط دینی خدمات کو انٹرنیٹ پر پیش کرنے کا ویب پورٹل

 

پانچواں اصول

پانچواں فریضہ ” الخوف من اللہ ” ہے یعنی اللہ تعالیٰ سے ڈرنا ،اس کی نا فرمانی سے بچنا ،قرآن عزیز نے ارشاد فرمایا ؛

یا یھا الناس اتقوا ربکم ان زلزلة الساعة شیٔ عظیم (الحج ١)

(ترجمہ) اے لوگو اپنے پالنے والے سے ڈرو بے شک قیامت کا زلزلہ بہت بڑی چیز ہوگا اور اس کی ا س قدر ہیبت ہوگی کہ کوئی کسی کے کام نہ آسکے گا۔ارشاد فرمایا؛

یا یھا الناس اتقوا ربکم واخشوا یوما لا تجزی والد عن ولدہ ولامولود ھو جاز عن والدہ شیٔا(لقمان ٣٣)

(ترجمہ) اے لوگو ڈرو اپنے رب کی نافرمانی سے اور ڈرو اس دن سے کہ کام نہ آسکے گا باپ اولاد کے کچھ اور نہ اولاد کام آسکے گی باپ کے کچھ بھی۔

اللہ تعالیٰ سے ڈرنے والے سے ہر چیز ڈرتی ہے

یاد رکھو جو اللہ تعالیٰ کا خوف اور ڈر نہ رکھے گا اس کو اللہ تعالیٰ ہر چیز سے ڈرائے گا لیکن اللہ تعالیٰ سے ڈرنے والے سے ہر چیز ڈرتی ہے اور اس کا احترام کرتی ہے جناب رسول کریم نے فرمایا من لم یخف من اللہ یخافہ اللہ من کل شی ٔ ۔ حضور انور کے ایک صحابی عبدالرحمن ہیں انہوں نے ایک سفر جہاد میں بہت سے صحابہ کرام کا سامان اٹھا لیا ،حضور انور نے دیکھ کر فرمایا انت سفینة (تو تو کشتی ہے )بس اسی نام سے مشہور ہوگئے۔ ایک جہاد کے سفر میں راستہ بھول کر ساتھیوں سے بچھڑ گئے، جنگل میں شیر سامنے آیا اس سے فرمایا انا سفینة غلام رسول اللہ میں سفینہ ہوں جوکہ جناب رسول اللہکا غلام ہے۔ شیر اس قدر فرمانبردار ہوگیا کہ اس کی پیٹھ پر سوار ہوگئے اور درندے جنگل کو چھوڑ گئے۔ ایک ہو وقت بھی تھا کہ درندے بھی ہمارے فرمانبردار تھے اب ہم سے خداوند قدوس کا خوف نکل گیا تو سب قومیں ہم پر حملہ آور ہورہی ہیں۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.